Estb. 1882

University of the Punjab

News Archives

News Updates

نیدر لینڈز میں اردو پر ایک یادگار تقریب
نیدر لینڈز میں اردو پر ایک یادگار تقریب


شعبہ اردو اوری اینٹل کالج پنجاب یونیورسٹی کے زیرِ اہتمام، اوری اینٹل کالج لاہور میں ۲۹/جنوری ۲۰۲۰ء بروز بدھ دوپہر بارہ بجے ایک تقریب ”نیدرز لینڈز میں اردو“ کے عنوان سے منعقد ہوئی۔
تقریب کی صدارت نامور شاعر، ادیب اور محقق ڈاکٹر خورشید الحسن رضوی صاحب نے فرمائی۔ تقریب کے مہمانِ خصوصی نیدر لینڈز سے تشریف لائے ہوئے مہمان ناول نگار، افسانہ نگار، سفرنامہ نگار جناب فاروق خالد تھے۔ ڈاکٹر محمد ارشد صدرِ شعبہ اردو دائرہ معارف اسلامیہ پنجاب یونیورسٹی، صدرِ شعبہ اردو پروفیسر ڈاکٹر زاہد منیر عامر، ڈاکٹر انیلا سلیم، نامور افسانہ نگار محمد عاصم بٹ اور امریکہ سے آئی ہوئی مہمان محترمہ عاصمہ باجوہ کے ساتھ ساتھ طلبا و طالبات کی بڑی تعداد نے شرکت کی۔
نظامت کے فرائض ایم-اے، اردو سالِ دوم کے طالب علم مشاہد حسین ہاشمی اور زنیرہ صبحین (ایم-اے سال دوم) نے سر انجام دیے۔ تلاوت قرآن کریم کی سعادت محمد بلال منظور نے حاصل کی۔ ہدیہ نعت سال اوّل کی طالبہ نیلم رزاق نے پیش کیا۔ ایم-اے اردو سال دوم کی طالبہ یاسمین اعتبار نے فارق خالد کے مشہور ناول سیاہ آئینے پر تنقیدی مضمون پیش کیا۔
صدرِ شعبہ اردو ڈاکٹر زاہد منیر عامر نے استقبالیہ کلمات ادا کرتے ہوئے حاضرین کو مہمانِ خصوصی جناب فاروق خالد صاحب کے ادبی سفر سے آگاہ کیا..... انھوں نے بتایا کہ اردو ہماری قومی زبان ہے۔ یہ نہ صرف پاکستان ہندوستان بلکہ دنیا بھر میں بولی یا جانی جاتی ہے۔ دنیا کی کوئی ایسی بڑی یونیورسٹی نہیں جس میں کسی نہ کسی حوالے سے اردو کی اہمیت نہ ہو۔ انھوں نے تفصیل کے ساتھ نیدرلینڈز میں اردو کی تاریخ بیان کی اور بتایا کہ اردو کی پہلی گرامر بھی ایک ڈچ باشندے جان جوشو کیٹلر نے لکھی تھی اور ولندیزیوں کا تعلق اردو سے سترھویں صدی عیسوی سے چلا آ رہا ہے۔
مہمانِ خصوصی جناب فاروق خالد صاحب نے دوران گفتگو نیدرلینڈز میں اردو اور اپنے ادبی سفر اور سفری تجربات سے آگاہ کیا۔ انھوں نے بتایا کہ سفر یمن میری زندگی کا یادگار اور خوشگوار سفر تھا۔ میں نے پہلا ناول ”سیاہ آئنے“ لکھا تو اس کے کردار چوں کہ یورپی تھے اس لیے فکشن کے گرداب کو بیلنس کرنے اور اپنے کرداروں کا مشاہدہ کرنے کے لیے میں نے یورپ کا سفر اختیار کیا۔
ڈاکٹر محمد ارشد صدر اردو دائرہ معارف اسلامیہ پنجاب یونیورسٹی نے نیدرلینڈز کی مشہور لائڈن یونیورسٹی کے زیرِ اہتمام تیار کیے جانے والے انسائیکلوپیڈیا آف اسلام کی تاریخ بیان کی اور بتایا کہ اس انسائیکلوپیڈیا کو ترامیم تصحیحات اور اضافوں کے ساتھ پنجاب یونیورسٹی نے چوبیس جلدوں میں شائع کیا ہے
بعدازاں صدرِ محفل ڈاکٹر خورشید الحسن رضوی نے فاروق خالد کی شخصیت اور تحریروں پر پُرمغز گفتگو فرمائی۔ انھوں نے کہا کہ مجھے ہمیشہ سے ایسے لوگوں کی تلاش رہی ہے جن میں زمیں پر آنے والے پہلے آدمی کی حیرت موجود ہو، فاروق خالد ان میں سے ایک ہیں...... فاروق خالد کی تحریروں میں رسمیت نہیں۔ وہ دنیا کو اپنی آنکھ سے دیکھنے کا حوصلہ رکھتے ہیں اور یہی ان کا کمال ہے۔ بعدازاں فاروق خالد صاحب نے طلبا و طالبات کی طرف سے کیے گئے سوالات کے نہایت شائستہ انداز میں جوابات دیے۔ تقریب کے اختتام پر مہمانانِ گرامی کی خدمت میں پھول پیش کیے گئے۔